اشاعت کے باوقار 30 سال

برطانیہ ایران کو توڑنے کی سازش کر رہا ہے

برطانیہ ایران کو توڑنے کی سازش کر رہا ہے

لندن: ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے برطانیہ، امریکا اور مغرب کو ایک بار پھر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے مغرب پر ایران کو تقسیم کرنے کی سازشیں کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تہران میں اپنے حامیوں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا کہ برطانوی حکومت ایران کو حصوں بخروں میں تقسیم کرنے کی سازشیں کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ کہتا ہے کہ متحدہ عراق اور متحدہ شام کا دور گذر چکا۔ وہ ایران کے بارے میں بھی یہی کچھ کہنا چاہتا مگر ایرانی قوم کی وجہ سے ایران کو تقسیم کرنے کی بات کھل کر کہنے کی ہمت نہیں ہو رہی ہے۔ سابق ایرانی بادشاہ رضا شاہ کی طرح مغرب ایران کو ’ایرانستان‘ بنانے کی سازشیں کر رہا ہے مگر دشمن کو اس میں کامیابی نہیں ہو گی۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ سپریم لیڈر کی طرف سے برطانیہ پر تنقید ملک کے اندرونی مسائل بالخصوص سیاسی، اقتصادی اور سماجی مشکلات پر قابو پانے میں ناکامی کا واضح ثبوت ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ پوری دنیا میں سوائے دہشت گرد گروپوں کے ایران کا کوئی دوست نہیں۔ کیونکہ ایرانی لیڈر دنیا کے ہرملک کو دشمن قرار دیتے ہیں۔ ایران کے دوست یمن کے حوثی اور لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ ہے جو تہران کے توسیع پسندانہ عزائم کو آگے بڑھانے میں اس کی مدد کر رہے ہیں۔سپریم لیڈر نے امریکی وزیر خارجہ جان کیری پر بھی سخت تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ عنقریب سبکدوش ہونے والے امریکی وزیر خارجہ جان کیری نئی امریکی انتظامیہ کو وصیت کر رہے ہیں کہ وہ ایران کے معاملے میں تشدد کا راستہ اختیار کرے۔ انہوں نے کہا کہ جان کیری کے دور میں بھی ایران پر پابندیاں برقرار رہیں اور وہ ایران کا گھیرا مزید تنگ کرنا چاہتے ہیں۔