اشاعت کے باوقار 30 سال

قطر کی شہزادی کے ایک سکینڈل کا انکشاف

لندن: برطانوی اخبار فنانشل ٹائمز نے قطر کی شہزادی کے ایک سکینڈل کا انکشاف کیا ہے۔ اخبار کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ برطانوی سکیورٹی سروسز کے اہلکاروں نے ایک مشتبہ شخص کی تلاش پر لندن کے ایک ہوٹل کے کمرے پر چھاپہ مارا تو وہ یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ قطری شہزادی 7 افراد کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں موجود ہے۔ ایم آئی 6 کے اہلکار سکاٹ لینڈ یارڈ کی مدد سے ہوٹل کے کمرے میں گھسے۔ شہزادی کے شناختی کارڈ کی جانچ پڑتال کرنے سے معلوم ہوا کہ شہزادی قطر سے تعلق رکھتی ہے اور اس کا نام شیخہ صلوا ہے اور وہ قطر کے سابق وزیر حمد بن جاسم بن جابر الثانی کی صاحبزادی ہے۔ ابتدائی تفتیش سے معلوم ہوا کہ شہزادی نے مشتبہ سعودی شخص سے کہا تھا کہ وہ مخصوص جسمانی ساخت والے 6 افراد کو لائے جس کے بدلے وہ اسے خطیر رقم دے گی۔ شہزادی نے سعودی شخص سے یہ بھی کہا کہ وہ اس کے پاس ہی رہے کیونکہ اگر کوئی شخص تشدد پر اتر آئے تو وہ بیچ بچا کرا سکے۔ شہزادی نے اس موقع پر کہا کہ اس کا اپنے ملک کی شہرت کو نقصان پہنچانے کا ارادہ نہیں تھا اور اس نے کسی برطانوی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی۔ اس موقع پر پولیس نے شہزادی سے کہا کہ سیکس کے مقصد کیلئے کسی ایجنٹ کی خدمات حاصل کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے۔ شہزادی کے خلاف کوئی مقدمہ درج نہیں کیا جاسکا کیونکہ اسے سفارتی استثنی حاصل ہے۔ تاہم آزاد زرائع سے اس خبر کی تصدیق نہیں ہوسکی ۔

Qatari Princess Shaikha Salwa's Sexual Scandal