اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

جاپان کی سرکاری کرنسی ین

انجمن تقدیسِ ادب کے زیرِ اہتمام محترمہ سیما نقوی کے ساتھ ایک یادگار ادبی نشست

تین جنوری 2015 کی شام انجمن تقدیس ادب کا ایونٹ نمبر 24 منعقد ہوا۔ جسے ٹورنٹو کینیڈا سے آئی ہوئی معروف شاعرہ سیما نقوی کے ساتھ ایک ادبی نشست  کا نام دیا گیا جوانجمن تقدیس ادب کے زیرِ اہتمام  ہیوسٹن میں شام ولی کے گھر پر منعقد ہوئی۔
احوالِ نشست
انجمن تقدیس ِ ادب کا ا یہ چوبیسواں مشاعرہ تھا۔
کینیڈا کے شہر ٹورنٹو سے آئی ہوئی معروف شاعرہ مھترمہ سیما نقوی مہمانِ ذی شان تھیں۔
ٹیکساس کے بیحد سینئر شاعر جناب کرامت گردیزی  مہمانِ خصوصی قرار پائے۔
اور معروف شاعرغضنفر ہاشمی نے مشاعرے کی صدارت کی۔
نظامت ہیوسٹن کے ہر دلعزیز شاعر جناب خالد خواجہ کی۔
دیگر شعراء میں عالمگیر شہرت یافتہ شاعرہ محترمہ تسنیم عابدی، بانی ء تقدیسِ ادب سید ایاز مفتی، صدرِ تقدیسِ ادب محترم باسط جلیلی، نعیم صدیقی، سید الطاف حسین بخاری، ترنم شبیر اور شام ولی شامل تھے۔
پہلے طعام سے معزز مہمانوں کی خاطر مدارات کی گئی۔
تقریباً ساڑھے آٹھ بجے مشاعرہ کا آغاز کیا گیا۔
سب سے پہلے میزبان شمشاد ولی خان کو دعوت ِ کلام دی گئی۔ اور انہوں نے اپنا کلام سناکر داد سمیٹی۔
اسکے بعد انجمن تقدیسِ ادب کی ایک اور ساتھی ترنم شبیر کو دعوت دی گئی۔ اور انہوں نے بہ سید عبدالستار مفتی میموریل عالمی فی البیدہہ مشاعرہ میں اپنی تازہ ترین غزل سنا کر سامعین کو داد دینے پر مجبور کردیا۔
 اسکے بعد محترم نعیم صدیقی صاحب  آئے اور انہوں نے ایک غزل اور دو نظمیں سنائیں اور داد وصول کی۔
اسکے بعد انجمن کے ایک اور دیرینہ ساتھی جناب سید الطاف حسین بخاری نے اپنی نظموہ جو تاریک راہوں میں مارے گئے پیش کی۔ جسے تمام حاضرین نے بیحد سراہا۔ اور انہیں خوب داد دی گئی۔
اسکے بعد بانیء تقدیسِ ادب اور جناب سید ایاز مفتی نے اپنا کلام پیش کیا۔ انکے قطعات پر معزز مہمانان ِ گرامی بھی جھوم اٹھے اور انہیں داد بزبان مکرر ارشاد دی گئی۔ محترم خالد خواجہ اور تسنیم عابدی نے انہیں مکرر ارشاد کے ساتھ داد سے نوازا۔ بعد ازاں انہوں نے ایک غزل ترنم سے پیش کی۔ اس کے بعد انجمن تقدیسِ ادب کے صدرِ محترم جناب باسط جلیلی نے دو نظمیں اور ایک  بہت خوبصورت غزل ترنم سے سنائی اور تالیوں کی گونج میں لوٹے۔
ناظم مشاعرہ اور ہیوسٹن کی آن اور شان محترم خالد خواجہ نے اپنے کلام کے ذریعے مشاعرہ لوٹ لیا۔
عالمگیر شہرت رکھنے والی محترمہ تسنیم عابدی انہوں نے بیحد خوبصورت غزلیں اور نظمیں پیش کر کے سب کے دل موہ لئے۔
اسکے بعد محترمہ سیما نقوی نے بہت سی غزلوں اور اپنے ترنم سے محفل کو مسحور و معطر کیے رکھا۔ انہیں جی بھر کے سنا گیا۔ اور سیما اسے انکے کالج کے زمانے کی نظمیں بھی سنی گئیں۔ مہمانِ خصوصی کرامت گردیزی  نے محفل کو بام ِ روج پہ پہنچا دیا۔ انہوں نے ہر انداز کی غزلیں پیش کی۔ عام فہم، سلیس اور مرصع اور ثقیل انداز میں انکے کلام کو ہر شخص نے بے حد سراہا۔
جناب صدرِ محترم جناب غضنفر ہاشمی نے بھی محفل کے اسی انداز کو قائم رکھا اور اپنی خوبصورت غزلوں سے حاضرین کو محظوظ کیا۔ خصوصاً انکی ایک تازہ غزل نے تو دو آتشہ کا کام کیا۔
مشاعرہ ساڑھے گیارہ بجے اپنے اختتام کو پہنچا۔ اور اس پروگرام کی یادوں کو کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرنے کے لئے فوٹو سیشن ہوا اور حاضرین نے اپنے محبوب شعراء کے ساتھ تصاویر بنوائیں۔