اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

صدام حسین کو گرفتار کر لیا گیا

نو ماہ تک آزاد فضا میں رہنے کے بعد عراق کے سابق ڈکٹیٹر صدام حسین کو 2003 میں آج کے دن گرفتار کر لیا گیا۔ صدام حسین کا زوال 20 مارچ 2003 سے شروع ہوا جب امریکہ کی قیادت میں 20 سال سے برسر اقتدار صدام حسین کا تختہ الٹنے کے لئے عراق پر چڑھائی کی گئی۔ صدام حسین بغداد سے کوئی 100 میل دور ایک قصبے تکریت میں ایک غریب گھر میں 1937 میں پیدا ہوئے۔ نوجوانی ہی میں وہ بغداد آ گئے، اور برسر اقتدار بعث پارٹی میں شامل ہو گئے۔ انہوں نے اس وقت کی حکومت کو گرانے کی کئی کوششوں میں حصہ لیا بالآخر وہ جولائی 1968 میں اپنے کزن کو برسر اقتدار لانے میں کامیاب ہو گئے۔ 11 سال بعد انہوں نے اقتدار خود سنبھال لیا۔ 1990 میں عراق نے کویت پر چڑھائی کر دی تو 1991 میں امریکہ کی سربراہی میں بین الاقوامی فوج نے عراق پر حملہ کر دیا۔ اس فوج نے کویت کو تو عراق کے چنگل سے چھڑا لیا مگر صدام حسین کی حکومت کا الٹنے میں کامیاب نہ ہو سکی۔ 2003 میں ایک بار پھر امریکہ ہی کی قیادت میں صدام حسین کا تختہ الٹنے کے لئے عراق پر چڑھائی کی گئی۔ صدام حسین روپوش ہو گئے۔ ان کی تلاش کرتے ہوئے ان کے بیٹے اودے اور قوسے دشمنوں کے ہتھے چڑھ گئے اور انہیں موصل میں ہلاک کر دیا گیا۔ 13 دسمبر 2003 کو تکریت سے 9 میل باہر 6 سے 8 فٹ گہری ایک خندق سے انہیں گرفتار کر لیا گیا۔ ان کی داڑھی بڑھی ہوئی تھی اور حالت بہت خراب تھی۔ انہوں نے کسی مزاحمت کے بغیر گرفتاری دے دی۔ اکتوبر 2005 میں ان پر مقدمہ چلا اور اگلے سال نومبر میں ان کو انسانیت کے خلاف جرائم کا مرتکب قرار دے دیا گیا۔ 30 دسمبر کو انہیں تختہ دار پر چڑھا دیا گیا۔ ان کے خلاف ایک الزام بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کا ذخیرہ کرنے کا بھی تھا جو آج تک دریافت نہیں ہو سکے۔