اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

اقوام متحدہ کے چارٹر پر دستخط

فلم جاز نمائش کے لئے پیش کی گئی

1975 میں آج کے دن فلم جاز سینماؤں میں نمائش کے لئے پیش کی گئی۔ اس فلم کے ہدایت کار سٹیون سپیل برگ تھے۔ اور اس فلم نے لاتعداد لوگوں کو سمندر میں پانی کے اندر جانے سے خوف زدہ کر دیا تھا۔ عظیم ا لجثہ سفید شارک کی کہانی فوری بلاک بسٹر اور فلم کی تاریخ میں سب سے زیادہ پسند کی جانے والی کہانی ثابت ہوئی۔ جاز بہترین فلم کی کیٹیگری میں اکیڈیمی ایوارڈ کے لئے نامزد ہوئی۔ اس کو تین آسکر ایوارڈ ملے۔ اس فلم نے اس وقت 27 سالہ ہدایت کار سپیل برگ کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا۔ اس فلم کے تین سیکویل بھی تیار ہوئے۔ اس فلم کی کہانی پیٹر بینچلے کے بیسٹ سیلر ناول سے ماخوذ تھی۔ تیکنیکی مشکلات کے باعث فلم کی تیاری میں کافی تاخیر ہوتی رہی۔ لیکن جاز کی نمائش کے بعد فلمی دنیا میں سپیل برگ کی اہمیت مسلم ہو گئی۔ بعد میں انہوں نے کلوز اینکاؤنٹرز آف دی تھرڈ کائینڈ (1977) ، ریڈرز آف دی لاسٹ آرک (1981)، ای ٹی: ایکسٹرا ٹیرسٹریل (1982) ، جراسک پارک (1993) ، شِنڈلرز لِسٹ (1993) ، اور سیونگ پرائیویٹ ریان (1998) جیسے شاہکار دنیا کو دئے۔ ای ٹی، جاز اور جراسک پارک ہر دور کی بہترین 10 فلموں میں شامل رہیں۔ سپیل برگ نے جیفرے کازن برگ اور ڈیوڈ جہفن کے ساتھ مل کر ایک فلم کمپنی بھی بنائی، جس نے امریکن بیوٹی (1999) ، گلیڈی ایٹر (2001) اور شرَیک (2001) جیسی خوبصورت فلمیں تیار کیں۔